اب مرتے دم تک کیلشیم کی کمی نہیں ہوگی عمر جتنی بھی ہو کیلشیم کی کمی کو پورا کریں گے

کیلشیم ہمارے جسم میں استعمال ہونے والے سب سے اہم منرلز میں سے ایک ہیں جو ہمارے ہڈیوں دانتوں اور جسم کو صحت مند رکھنے کے ساتھ ساتھ ہمارے جسم کو ہمارے بدن کو چست رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔ اگر ہم کیلشیم پوری مقدار میں نہیں لے رہے پھر ہم متعدد بیماریوں کا شکار ہوسکتے ہیں۔ کیلشیم کی کمی کی صورت میں جسم میں شدید تھکاوٹ محسوس کرتا ہے ۔ سستی اور کاہنی کا فقدان پیدا ہوجاتا ہے ۔ سر ہلکا محسوس ہونا لگتا ہے ۔ چکر آنا شروع ہوجاتے ہیں پٹھوں میں کھنچاؤ درد اور کھلیوں کا پڑ جانا ۔کیلشیم کی کمی کی سب سے ابتدائی اور اہم وجہ ہے ۔ جس میں عام طور پر ٹانگوں او ربازؤں سے درد نکلتا ہے

کیلشیم ہڈیوں کی صحت کو قائم رکھنے کیلئے بہت اہم ہے ۔ ہڈیوں میں کیلشیم کی بہت وافر مقدار پائی جاتی ہے ۔ اگر جسم میں کیلشیم کی کمی واقع ہوجائے تو جسم میں کیلشیم کی کمی ہڈیوں سے پوری ہونا شروع ہوجاتی ہے ۔ جس سے ہڈیاں کمزور ہوجاتی ہیں۔ باریک ہوجاتی ہیں معمولی چوٹ پر ٹوٹ بھی جاتی ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ دانتوں میں بڑی تعداد میں کیلشیم موجود ہوتا ہے ۔ جسم میں کیلشیم کی کمی ہوجائے تو یہ کیلشیم کی کمی بھی دانتوں سے پوری ہونا شروع ہوجاتی ہے ۔ جس سے دانت کمزور مسوڑوں کی تکلیف دانتوں میں خلاء کا پیدا ہوجانا دانتوں کی ساخت بگڑ جاتی ہے اگر یہ کمی چھوٹے بچوں میں ہوجائے ان کے دودھ کے دانت دیر سے نکلتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کیلشیم کی کمی ہمارے موڈ کو خراب کرنے کا باعث بن سکتی ہے جس کیوجہ سے ڈپریشن جیسی بیماریا ں جنم لیتی ہیں
کیلشیم کی کمی کو پورا کرنے کیلئے پتے دار سبزیاں بہت مفید ہیں مثلاً گھوبی ،پالک ،ساگ اور میتھی وغیرہ آپ ان سبزیوں کو باقاعدگی سے استعمال کریں انشاء اللہ بہت فائدہ ہوگا۔ پھلیاں انسانی جسم کو کیلشیم کی بھرپور مقدار فراہم کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ مٹر گوار کی پھلی اور لوبیا کی پھلی میں کیلشیم کی وافر مقدار کیساتھ ساتھ پروٹین بھی بہت زیادہ پایا جاتا ہے ۔ دودھ کیلشیم کی کمی کو پورا کرنے کیلئے بہترین ٹونک ہے ۔اس میں کیلشیم کی بڑی وافر مقدار موجود ہوتی ہے ۔
دودھ میں کیلشیم کی خصوصیت سے ہڈیوں پٹھوں اور جوڑوں کو مضبوط کرنے میں بہت اہم کردار ادا کرتی ہیں ۔ اس کے علاوہ ڈیرے پروڈکٹس مکھن دہی وغیرہ یہ بھی جسم کو کیلشیم فراہم کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ ایک پاؤ دودھ میں تیس فیصد کیلشیم اور وٹامن ڈی کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے ۔ جو ہڈیوں اور پٹھوں کی مضبوطی میں نہایت نفع بخش ہے ۔ بوڑھے بچے جوان دودھ سے بنی اشیاء کا بکثرت استعمال کرکے خود کو صحت مند اور چاک وچوبند زندگی گزار سکتے ہیں ۔ دہی ایک ایسی غذا ہے جس کے ایک کپ میں تیس فیصد کیلشیم اور بیس فیصد وٹامن ڈی موجود ہوتا ہے ۔ اس کے ساتھ ساتھ بادام کو اپنی روزمرہ خوراک میں شامل کرکے اپنی ہڈیوں کو صحت مند اور چاک وچوبند بنا سکتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.