62

بریکنگ نیوز: غیر اخلاقی مواد بڑھ گیا ، ٹک ٹاک پر دوبارہ پابندی کی خبر آ گئی

ویڈیو شیئرنگ موبائل ایپلی کیشن ٹک ٹاک پر ایک بار پھر پابندی کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی گئی۔ تفصیلات کے مطابق شہری کی طرف سے دائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ ٹک ٹاک کی وجہ سے معاشرے میں مثبت اثرات کے بجائے منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں

کیوں کہ موبائل ایپلی کیشن کی وجہ سے غیر اخلاقی مواد میں اضافہ ہوگیا ہے جس کی وجہ سے معاشرہ بے راہ روی کی طرف جا رہا ہے اس لیے ٹک ٹاک پر فوری پابندی لگائی جائے۔بتایا گیا ہے کہ جسٹس شاہد وحید کی طرف سے ندیم سرور ایڈووکیٹ کی ٹک ٹاک ایپ پر پابندی کیلئے دائر کردہ درخواست پر سماعت کی گئی جہاں عدالت نے وکیل کو دلائل کی تیاری کیلئے وقت دے دیا اور سماعت غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کر دی گئی۔خیال رہے کہ پابندی کا شکار ٹک ٹاک کو حال ہی میں اس وقت پاکستان میں بحال کیا گیا ، جب سوشل میڈیا ایپلی کیشن کی انتظامیہ کی طرف سے پاکستانی حکام کو یقین دہانی کروائی گئی تھی کہ پابندی کی وجہ بننے والے متنازع مواد کو ہٹانے کے لیے میکانزم بنا نے کے لیے تیار ہیں، جس کے بعد اس مواد کو ہٹا دیا جائے گا، جب کہ مستقبل میں غیر اخلاقی مواد پر قابو پانے کے اقدامات بھی کیے جائیں گے، جس کے لیے غیر اخلاقی مواد کی نگرانی اور ایسے اکاؤنٹس کی معطلی کے لیے بھی نظام بنالیا گیا ۔اس حوالے سے پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی نے ٹک ٹاک کو بحال کرنے کی تصدیق بھی کی ، اور کہا گیا کہ ٹک ٹاک کو پاکستان میں دوبارہ کھولا جارہا ہے کیوں کہ انتظامیہ کی طرف سے غیر اخلاقی مواد کو ہٹانے اور ایسے مواد کے حامل اکاونٹس کو بلاک کرنے کی یقین دہانی کرادی گئی ہے جب کہ آئندہ ٹک ٹاک اکاونٹس کو مقامی قانون کے مطابق پرکھا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں