52

نواز شریف نے قومی راز مخالفین کو دینے شروع کر دیئے! حامد کرزئی کے ذریعے امریکہ کو کونسے پیغامات ..

معروف اینکر و تجزیہ کار عمران ریاض خان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں سیاسی میدان میں جو کچھ ہو رہا ہے یہ سب اچانک نہیں ہوا۔یہ تحریک صرف نواز شریف کے دم پر چل رہی ہے۔کیونکہ صرف وہی اداروں کو ٹارگٹ کر رہے ہیں اور لڑائی کو وہاں
تک لے گئے ہیں جہاں سے واپسی ممکن نہیں لہذا یہ کہا جا سکتا ہے کہ اس وقت پی ڈی ایم نواز شریف کے دم پر ہی کھڑی ہے۔نومبر 2019ء میں نواز شریف علاج کروانے باہر چلے گئے تھے۔دو ماہ تک مکمل خاموشی چاہی رہی لیکن پھر حکومت سے سوال اٹھانا شروع کیا کہ نواز شریف کب واپس آئیں گے۔نواز شریف کو باہر جاتے وقت جو گارنٹی دی گئی تھی وہ یہ بھی تھی کہ مریم نواز کو بھی باہر بھجوا دیا جائے گا۔یہ بھی طے تھا کہ نواز شریف حکومت یا اداروں کے خلاف کوئی سازش نہیں کریں گے بلکہ خاموشی سے یہ وقت بچوں کے ساتھ لندن میں گزاریں گے۔یہی وجہ ہے کہ مریم نواز اور نواز شریف خاموش رہے لیکن پھر انہوں نے وعدہ توڑ دیا۔نواز شریف نے لندن میں 11 جنوری کو سابق افغان صدر حامد کرزئی سے ملاقات کی۔جب کہ پاکستان کی انٹیلجینس نے معاملے کی کھوج لگانا شروع کر دیا۔یہ بھی خبریں سامنے آئی کہ نواز شریف نے بھارتی ایجنسی کے لوگوں سے بھی ملاقات کی تاہم اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔نواز شریف نے حامد کرزئی سے کچھ ایسی باتیں کیں جس پر ایجنسیوں کو غصہ آ گیا۔نواز شریف نے کہا کہ افغانستان میں امن کے لیے امریکا کو پاکستان کی ضرورت ہے۔آپ بطور افغانی امریکا کے اندر لابنگ کریں اور انہیں یہ بتائیں کہ نواز شریف سے زیادہ قابل بھروسہ آدمی کوئی نہیں ہے۔افغانستان اور امریکا کے لیے جو خدمات نواز شریف دے سکتے ہیں وہ موجودہ حکومت یا اسٹیبلشمنٹ نہیں دے سکتی،حامد کرزئی کو یہ بھی بتایا کہ پاکستان کی فوج آپ کے ساتھ ڈبل گیم کر رہی ہے۔وہ امریکا کو کچھ اور بتائیں گے اور کام کچھ کریں گے،وہ امریکا کو دھوکہ دیں گے لہذا میں ایک قابل بھروسہ آدمی ہوں،مریکا تک یہ پیغام پہنچائے جائے کہ نواز شریف آپ کے لیے مددگار ثابت ہوں گے۔اس کے بعد نواز شریف کو پیغام بھجوایا گیا کہ مریم نواز کو باہر بھجوایا جا رہا تھا لیکن اب نہیں بھجوایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں