57

نیا اور جدید پاکستان ۔۔۔ !!! حکومت نے پاکستانیوں کو ٹیکنالوجی کے حوالے سے بڑی خوش خبری سنا دی

وفاقی دارالحکومت میں پبلک ٹرانسپورٹ کی الیکٹرک بسوں میں منتقلی کی یادداشت پر دستخط ہو گئے۔تفصیلات کے مطابق وزارتِ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اور سی ڈی اے کی جانب سے ایک یادداشت پر دستخط کیے گئے ہیں جس کے تحت پبلک ٹرانسپورٹ کو برقی بسوں میں منتقل کیا جائے گا۔اس سلسلے میں وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی
فواد چوہدری نے بتایا کیپٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) پبلک ٹرانسپورٹ کو الیکٹرک بسوں پر شفٹ کرے گا، 3 سے 5 سال میں پبلک ٹرانسپوٹ کو الیکٹرک بسوں پر شفٹ کیا جائے گا۔انھوں نے کہا ابتدائی طور پر 30 الیکٹرک بسیں چلائی جائیں گی، جن میں 48 ہزار مسافر سفر کر سکیں گے، ان بسوں کے چلنے سے 30 ہزار بیرل ڈیزل کی بچت ہو گی، اور 51 کرڑو روپے سال کا ڈیزل بچے گا۔فواد چوہدری کا کہنا تھا عالمی آلودگی میں 25 فی صد حصہ ٹرانسپورٹ کا ہے، 10 سال میں 40 فی صد ٹرانسپورٹ الیکٹرک پر منتقل کر لی تو اچھے نتائج نکلیں گے، کوشش ہے اسلام آباد کو ایشیا کا پہلا شہر بنائیں جس میں مکمل الیکٹرک بسیں ہوں۔وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے مزید بتایا کہ لڑکیوں کے لیے تھری ویلر الیکٹرک سواری بھی لانا چاہتے ہیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بدقسمتی ہے، کچھ لوگ نئے پاکستان کو مشکل وقت سے جوڑ رہے ہیں، کیمرا مین لوگوں سے پوچھتا ہے کدھر ہے نیا پاکستان؟ لوگ کہتے ہیں مہنگائی ہوگئی ہے، پہلے روٹی کپڑا مکان نعرہ تھا، اب پہلی بار غریب، مزدور اور تنخواہ دار طبقے کو کم شرح سود پر گھر ملے گا۔انہوں نے راوی ریور اربن ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کے سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں نے شوکت خانم ہسپتال اور نمل یونیورسٹی بنائی تو بڑی مشکل آئی۔نیا پاکستان کیا ہے؟ جب بھی کوئی مشکل وقت ہوتا ہے تو کیمرا مین لوگوں سے پوچھتا ہے کدھر ہے نیا پاکستان؟ لوگ کہتے ہیں مہنگائی ہوگئی ہے، برے حالات ہیں۔ اسی طرح اب کراچی میں سیلاب آیا ہوا ہے، تو جب لوگوں سے کوئی پوچھے گا بتائیں کیسے حالات ہیں تو کوئی تعریف تو نہیں کرے گا؟ جب ملک کے مشکل حالات ہیں، ایک ملک کو مقروض کردیا گیا، ملک چلانے کیلئے پیسا چاہیے ہو، تو مشکل وقت تو ہوتا ہے۔دنیا میں جس نے بھی بڑا کام کیا ہے، اس نے اپنی صلاحیتوں، تعلیم یا بڑے گھر میں پیدا ہونے سے نہیں کیا، بلکہ اس نے خواب بڑا دیکھا تھا۔ جو ماؤنٹ ایورسٹ کی چوٹی پر چڑھا اس کو ہر کوئی یاد رکھے گا۔ اگر میری خواب یہ ہے کہ میں نے کلب کرکٹر بننا ہے تو میں انٹرنیشنل کرکٹر نہیں بنوں گا۔ جو بھی اوپر جاتا ہے اس کی سوچ بڑی ہوتی ہے، جب کسی نے سوچا کہ چاند پر جانا ہے تو کہا گیا دنیا ہی ختم ہوجائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں