69

وفاقی حکومت کا بڑا کھڑاک۔۔۔! 20 سال ملازمت کرنے والے گریڈ 1 تا 16 کے 20 ہزار ملازمین کی ریٹائرمنٹ کے..

ریٹائرمنٹ کے بعد اسامیاں ختم کی جائیں گی، زیادہ ترکام ای آفس پر منتقل کر کے نائب قاصد کی اسامیاں ختم یا کم کی جائینگی کلرک ،اسسٹنٹ کی اسامیاں کم، پرسنل اسسٹنٹ، پرسنل آفیسر، سٹاف آفیسر کا کام سٹینو ٹائپسٹ اور سٹینو گرافر کے سپرد کیا جائیگا۔

وفاقی حکومت نے بجٹ اخراجات میں کمی لا نے اور وزارتوں و محکموں کے ڈھانچے کی تنظیم نو کیلئے 1 تا 16 گریڈ کی اسامیوں میں مرحلہ وار کمی کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وفاقی حکومت نے مستقبل میں سرکاری محکموں میں نائب قاصد، کلرک، یوڈی سی، اسسٹنٹ، سٹینو ٹائپسٹ، سٹینو گرافر، پرسنل اسسٹنٹ، پرنسپل سٹاف آفیسر اور پرسنل سٹاف آفیسر کی اسامیوں کو کم کرنے کیلئے مختلف تجاویز پر کام شروع کردیا ہے ۔ پہلے مرحلے میں 1 تا 16 گریڈ کے 20 سال ملازمت والے 55 ہزار ملازمین میں سے 20 ہزار سے زائد ملازمین کو ریٹائر کرکے مذکورہ ا سامیاں ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ وفاقی وزارتوں، ڈویژنوں اور محکموں میں گریڈ 1 تا 16 کی ایک لاکھ کے قریب اسامیاں ہیں جن میں بڑی تعداد میں کمی کی جائے گی۔ تجاویز میں کہا گیا ہے کہ وفاقی وزارتوں کو ای آفس پر جلد منتقل کیاجائے اور افسران کمپیوٹر پر خود کام کریں۔ افسران ای افس کے ذریعے سرکاری فائلوں پر نوٹ اور سمریاں خود بنائیں تاکہ ملازمین کی ضرورت کم ہوجائے ۔
یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایک جیسے کام کی نوعیت والی اسامیوں جیسے کلرک، یوڈی سی اور اسسٹنٹ کی پوسٹوں کی تعداد کم کردی جائے ۔ تجاویز میں کہا گیا ہے کہ نائب قاصد کا کام صرف فائل اور سرکاری خطوط کو ایک سیکشن سے دوسرے سیکشن میں پہنچانا ہوتا ہے ، ای آفس کے بعد تمام کام کمپیوٹر پر منتقل ہوجائے گا جس سے نائب قاصد کا کام کم ہوجائے گا، اسی طرح نائب قاصد کی اسامیاں ختم یا کم کردی جائیں گی۔ تجویز دی گئی ہے کہ ضروری کاموں کیلئے سٹینوٹائپسٹ اور سٹینو گرافر کی اسامیوں میں ایک کیڈر کی اسامیاں برقرار رکھی جائیں کیونکہ دونوں اسامیوں کا ایک ہی کام ہے ۔ یہ تجویز بھی دی گئی ہے کہ پرسنل اسسٹنٹ، پرسنل آفیسر، پرنسپل سٹاف آفیسر اور پروٹوکول کیڈر کی اسامیوں کو ختم کرکے سٹینو ٹائپسٹ اور سٹینو گرافر کو مذکورہ ذمہ داریاں سو نپی جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں